JoomlaLock.com All4Share.net

اللہ سے خوف اور امید رکھ

تجھے اللہ سے خوف اور اسی سے امید ہونی چاہیے؛ ایک جیسا ایمان رکھ، امید کا امیدوار رہ،اللہ سے حسن ظن رکھ اور اس کی رحمت کا خواستگار رہ؛ کیونکہ رسول اللہ  سے ثابت ہے: “اگر کافر یہ جان جاتا کہ اللہ کی رحمت کس قدر وسیع ہے تو جنت سے کبھی کوئی نا امید نہ ہوتا۔”

فتوحات مکیہ از شیخ اکبر ابن العربی

جنازے کے آداب

اگر کوئی تیرا دوست ہو تو بیماری میں اس کی عیادت کر، اور اگر اس کا انتقال ہو جائے تو اس کے جنازے میں شرکت کر۔ جب تو جنازے میں شریک ہو تو اگر سوار ہے تو اتر کر پیدل چل اور اگر پیدل چل رہا ہے تو جنازے کے آگے چل۔ جب تو کسی مسلمان کو دفنانے میں شریک ہو تو اس کی قبر سے جانے میں جلدی نہ کر بلکہ کچھ دیر وہاں رک جب تک کہ اس سے سوال جواب نہ کر لیا جائے؛ وہ تیرے ٹھہرنے سے انس محسوس کرے گا۔ اگر تو جنازہ اٹھائے جا رہا ہو تو جلدی کر؛ اگر آگے اس کے لیے بہتری ہو گی تو تو اس جلد از جلد اسے وہاں پہنچائے گا، لیکن اگر ایسا نہ ہوا تو تو جلدی اپنے کندھوں سے یہ بوجھ اتارے گا۔ اور ہاں اپنے مردوں کی برائیاں نہ کر۔

فتوحات مکیہ از ابن العربی

عشاق کون لوگ ہیں؟

شیخ اكبر فتوحات مكیہ کے باب نمبر 178 میں فرماتے ہیں: عشاق وہ لوگ ہوتے ہیں جو محبت میں فنا ہو جاتے ہیں، جب محبت انسان کے دل و دماغ پر چھا جاتی ہے اور اسے اپنے محبوب کے علاوہ ہر ایک سے اندھا کر دیتی ہے، اور (محبت کی) یہ حقیقت اس کے اجزائے بدن، اس کے روح و جسم میں اس طرح سرایت کر جاتی ہے کہ اس کی رگ و پَے اور گوشت پوست میں خون کی طرح دوڑنے لگتی ہے، اس کے جوڑوں میں گھس جاتی ہے، اس کے وجود سے ایک ہو جاتی ہے، روح اور جسم کے تمام اجزا سے لپٹ جاتی ہے اور اپنے سوا کسی دوسرے کے لیے کوئی جگہ نہیں چھوڑتی تو ایسی صورت میں اس کا بولنا سُننا اپنے محبوب سے ہوتا ہے، ہر چیز میں وہ اسی کو دیکھتا ہے، ہر صورت میں وہی دِکھتا ہے، اور عاشق کچھ بھی دیکھتا ہے تو یہی کہتا ہے: یہ وہی ہے، محبت کی ایسی حالت کو عشق کہتے ہیں۔ جیسا کہ زلیخا کے بارے میں روایت کیا جاتا ہے، ایک دفعہ اس کی رگ کٹ گئی اور خون زمین پر گر پڑا، پس جس جگہ بھی اس کا خون گرتا وہاں یوسف لکھا جاتا کیونکہ اِس نام کا ورد اس کی رگ و پَے میں جاری تھا۔ اور اسی طرح حلاج کے بارے میں بھی بتایا جاتا ہےجب اس کے ہاتھ پاؤں کاٹے گئے تو زمین پر جہاں جہاں اس کاخون گرا وہاں اللہ اللہ لکھا گیا، اسی لیے تو آپ نے کہا: "میرا جو کوئی جوڑ یا عضو کاٹا گیا ہے تو اس میں تم سب کے لیے یاد دہانی ہے۔"

(مخطوط: السفر - 15، ص 149)

دعا اور قبولیت

جب اللہ سے دعا کر تو اس کے پورا ہونے کو آہستہ مت جان اور یہ نہ کہہ: اللہ تو میری دعا ہی نہیں سنتا؛ بیشک وہ سچا ہے اور فرماتا ہے: ﴿میں دعا کرنے والے کی دعا سنتا ہوں جب وہ مجھے پکارے﴾ (البقرة: 186) بیشک وہ جواب دیتا ہے، اگر تیر ے ایمان کی سماعت ہو تو تو اس کا جواب سنے، اور اگر نہیں سنتا تو اپنے ایمان کو الزام دے۔ اگر تو نے گناہ یا قطع رحمی کی دعا کی تو اللہ تعالی ایسی دعائیں قبول نہیں کرتا۔ اللہ تعالی نے ہمیں بتایا ہے کہ ہم اس سے کیا کچھ مانگیں، جبکہ یہ تو دعا میں حد سے تجاوز ہے۔ جب کوئی شخص یہ کہتا ہے: اس نے میری نہیں سنی تو وہ دراصل اللہ کے اس قول میں اس کی تکذیب کرتا ہے﴿میں دعا کرنے والی کی دعا قبول کرتا ہوں﴾ (البقرة: 186) اور جو اللہ کی تکذیب کرے وہ مومن نہیں، اور اگر اس نے توبہ نہ کی تو اس کی ہلاکت جھٹلانے والوں کے ساتھ ہو گی۔

فتوحات مکیہ از شیخ اکبر ابن العربی

جماعت کی حکمت

اللہ تعالی فرماتا ہے: ﴿ اُس نے تمہارے لئے دین کا وہی راستہ مقرّر فرمایا جس کا حکم اُس نے نُوح (علیہ السلام) کو دیا تھا اور جس کی وحی ہم نے آپ کی طرف بھیجی اور جس کا حکم ہم نے ابراھیم اور موسٰی و عیسٰی (علیھم السلام) کو دیا تھا (وہ یہی ہے) کہ تم (اِسی) دین پر قائم رہو اور اس میں تفرقہ نہ ڈالو﴾ (الشوری: 13) پس حق نے اقامت دین کا حکم دیا – جو ہردور اور ملت میں شریعتِ وقت ہی ہے – اور اس پر جمع ہوجاؤ؛ بیشک اللہ تعالی کا ہاتھ جماعت کے ساتھ ہے۔ اور "اکیلی رہ جانے والی بھیڑ کو بھیڑیا کھا جاتا ہے" یہ وہی ہے جو جماعت چھوڑ کر تن تنہا کسی جانب چل پڑی۔

Read more...

Who are we

Spiritual force behind the Foundation's activities here in Pakistan. Our Shaykh in Qadari Tariqa

Syed Rafaqat Hussain Shah
Shaykh of Qadari Razzaqi tariqa
Ahmed

Shaykh of Tariqa al Akbariiya, our mentor in correct understanding of the Shaykh's teachings.

Shaykh Ahmed Muhammad Ali
Shaykh of Akbariyya Tariqa

Editor, Translator and Ambassador of Shaykh al Akbar. Working full time in the foundation

Abrar Ahmed Shahi
Head at Ibn al Arabi Foundation Pakistan

Proof reader and Urdu language editor, contributing part time on Foundation's activities

Hamesh Gul Malik
Secretary General.